Categoty:-
Faraz Ahmed Faraz Ghazals

فراز احمد فراز غزل   جو حرفِ حق تھا


جو حرفِ حق تھا وہی جا بجا کہا سو کہا
 بلا سے شہر میں میرا لہو بہا    سو    بہا

 ہمی کو اہل جہاں سے تھا اختلاف، سو ہے
ہمی نے اہلِ جہاں کا    ستم    سہا   سو   سہا


 جسے جسے نہیں چاہا    اُسے    اُسے    چاہا
جہاں جہاں بھی مرا دل نہیں رہا سو رہا


نہ دوسروں سے شرم نہ خود سے شرمندہ
 کہ   جو    کیا سو کیا    اور جو کہا    سو    کہا


یہ دیکھ تجھ سے وفا کی کہ بے وفائی کی
 چلو میں اور    کہیں    مبتلا رہا سو رہا


 تیرے نصیب اگر جا لگے کنارے سے
 وگرنہ    سیلِ زمانہ    میں جو بہا سو بہا


شکست و فتح مرا مسئلہ نہیں ہے فراز
 میں    زندگی سے   نبرد آزما   رہا سو  رہا

Jo Harf e Haq tha Wohi Jaa Bajaa kaha so kaha
Balaa sy shehr mein Mera Lahu bahaa so bahaa

Hummy ko Ahl e Jahan sy Tha ikhtalaaf so ha
Hummy ny Ahl e jahan ka sitam sahaa so sahaa

Jisy jisy nahi chahaa usy usy chahaa
Jahan jahan bhe mera Dil nahi raha so raha

Na doosro sy Sharam na khud sy Sharminda
Keh jo kia so kia aur jo kaha so kaha

Yeh dekh Tujh sy Wafa ki key Be'wafai ki
Chalo mein aur kahi mubtalaa raha so raha

Tery naseeb agar ja lagy kinaary sy
Wgarna Seel e Zamana mein jo baha so baha

Shikast o Fatah mera Masla Nahi ha Faraz

Mein Zindagi sy Nabard Azmaa raha so raha



0 Comments